اسٹیٹ بینک کی پوری انتظامیہ کو فارغ کرنا چاہیے تھا، چیف جسٹس گلزار احمد

0
167

اسلام آباد: سپریم کورٹ میں ‏گولڈن ہینڈ شیک اسکیم کے حوالے سے اسٹیٹ بینک کی اپیل پر سماعت ہوئی۔ چیف جسٹس گلزار احمد کی سربراہی 2 رکنی بنچ نے سماعت کی۔

 چیف جسٹس گلزار احمد اسٹیٹ بینک کی انتظامیہ پر برہم ہوگئے اور کہا کہ ‏افسران نے دیگر ملازمین کے بجائے اپنی تنخواہیں بڑھا دیں۔ اسٹیٹ بینک کی پوری انتظامیہ کو فارغ کرنا چاہیئے تھا۔

چیف جسٹس نے کہا کہ اسٹیٹ بینک کو اربوں روپے کا نقصان پہنچایا گیا اور ‏اتنا بڑا نقصان بینک انتظامیہ کی نااہلی سے ہوا۔ اس طرح کے معاملات سامنے آتے ہیں تو تکلیف ہوتی ہے۔ بڑے بڑے افسر تنخواہیں لے کر اداروں کو تباہ کردیتے ہیں اور ‏عدالت نے اسٹیٹ بینک کی اپیل سماعت کیلئے منظور کرلی۔

عدالت نے حکم دیتے ہوئے کہا کہ کیس کی مزید سماعت 6 ماہ بعد ہوگی۔

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں