صوبائی وزیر داخلہ بلوچستان کی زیرصدارت پاک افغان بارڈر باڑ سے متعلق اجلاس

0
115

کوئٹہ: صوبائی وزیر داخلہ میر ضیاء اللہ لانگو کی زیرصدارت پاک افغان بارڈر باڑ سے متعلق محکمہ داخلہ کے اعلی عہدیداروں کا اجلاس۔ اجلاسں میں باڈرپر باڑ تنصیب کرنے سے متعلق 8 منقسم گاؤں، پر گزشتہ فیصلوں پر پیشرفت کا جائزہ لیا گیا۔

ڈپٹی کمشنر چمن، کمانڈنٹ چمن اسکاؤٹس، نے افغان بارڈر پر باڑ لگانے کے منصوبے پر عمل درآمد کی موجودہ صورتحال سے متعلق تفصیلی رپورٹ پیش کی۔

اجلاس میں سدرن کمانڈ سے بریگیڈ واجد، ڈی جی لیویز مجیب الرحمٰن قمبرانی، ایڈیشنل سیکرٹری داخلہ قادر بخش پرکانی، کمانڈنٹ چمن اسکاؤٹس کرنل راشد، ڈپٹی کمشنر قلعہ عبداللہ جاوید مینگل اور صوبائی محکموں کے انتظامی و متعلقہ ڈویژنل انتظامیہ کے علاوہ دیگر صوبائی اداروں کے عسکری و اعلیٰ حکام نے شرکت کی۔

متعلقہ حکام نے منصوبے کو ترجیحی بنیادوں پر مکمل کرنے اور اس مقصد کے حصول کے لیے تمام دستیاب وسائل زیر غور لائے جائینگے۔ جلاس کے شرکاء نے مذکورہ منصوبے پر کمپینسیشن ریٹ کے لئے مختلف تجویز، اب تک کی گئی پیش رفت و دیگر مختلف پہلوؤں پر تفصیلی بریفنگ بھی دی گئی۔

اجلاس میں وزیر داخلہ نے کہا کہ پاک افغان بارڈر پر باڑ سے متعلق اقدامات کو ہماری کمزوری نہ سمجا جاہے اور باڈر باڑ کی تکمیل ملکی مفادات میں ہے۔ لوگوں کو اس حوالے سے درپیش مسائل کا حل عملی اقدامات سے یقینی بنایا جاسکے گا۔ منصوبہ صوبے میں امن وامان کی صورتحال کو مزید مستحکم بنانے کے لیے ناگزیر ہے۔ منصوبہ پر عملدرآمد دور حاضر کی اہم ترین ضرورت ہے۔ پاک افغان سرحد بارڈر باڑ مکمل ہونے سے معیشت پر بھی مثبت اثرات مرتب ہو گئے اور باڈر پر باڑ کی تنصیب دونوں ممالک کے مشترکہ مفاد میں ہے۔ باڑ  کی تنصیب کے عمل کو تیز  کرنا حکومت کی ترجیحات میں شامل ہے اور تمام سٹیک ہولڈرز کو اپنی ذمہ  داریاں بروقت پوری کریں۔

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں