نواز شریف کی جائیداد نیلامی روکنے کی درخواست مسترد

0
43

اسلام آباد: اسلام آباد ہائی کورٹ نے محفوظ فیصلہ سنا دیا۔ اسلام آباد ہائی کورٹ نے نواز شریف کی جائیداد نیلامی روکنے کی درخواست مسترد کردی۔ چیف جسٹس اطہر من اللہ اور جسٹس عامر فاروق نے فیصلہ سنایا۔

تحریری فیصلے میں درخواست میرٹ کے برعکس ہے، اسلام آباد ہائی کورٹ درخواست کو مسترد کرتی ہے۔ احتساب عدالت نے نواز شریف کی جائیداد بحق سرکار ضبط اور نیلام کر نے کا حکم سنا رکھا ہے۔

اسلام آباد ہائی کورٹ کے تحریری فیصلے میں لکھا کہ اسلام آباد ہائی کورٹ نے احتساب عدالت کے فیصلے میں کوئی قانونی سقم نہیں پایا۔ درخواست گزار نواز شریف کی جائیداد میں اپنا انٹرسٹ پر مطمئن نہیں کرسکے۔

میاں اقبال برکت، اسلم عزیز اور اشرف ملک کی نیلامی روکنے کیلئے دائر درخواستیں مسترد کردی۔

درخواست گزار نے استدعا کی کہ اپر مال لاہور کا گھر، رائیوانڈ کی ایک سو پانچ ایکڑ اراضی کی ضبطگی سے روکا جائے۔ شیخوپورہ کی 88 کنال ارضی کی ضبطگی کا احتساب عدالت کا حکم بھی کالعدم قرار دیا جائے۔ احتساب عدالت نے فیصلہ دیتے وقت حقائق کو نظر انداز کیا۔ یکم اکتوبر 2020، اپریل اور جون 2021 کا احتساب عدالت کا فیصلہ کالعدم قرار نہ دیا گیا تو درخواست گزار متاثر ہونگے۔ احتساب عدالت کے فیصلے سے درخواست گزاروں کو ناقابل تلافی نقصان کا اندیشہ ہے۔ یکم اکتوبر 2020، اپریل اور جون 2021 کے احتساب عدالت کے فیصلے کالعدم قرار دے۔

احتساب عدالت اسلام آباد نے تینوں درخواست گزاروں کے اعتراضات پر مبنی درخواست مسترد کردی تھی۔ توشہ خانہ ریفرنس میں احتساب عدالت نے یہ اراضی بحق سرکار ضبط اور پھر نیلام کرنے کا حکم سنا رکھا ہے۔

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں